وہ انتہائی عجیب و غریب پابندی جس کی وجہ سے لڑکے کو نوکری چھوڑنا پڑگئی 

وہ انتہائی عجیب و غریب پابندی جس کی وجہ سے لڑکے کو نوکری چھوڑنا پڑگئی 


وہ انتہائی عجیب و غریب پابندی جس کی وجہ سے لڑکے کو نوکری چھوڑنا پڑگئی 

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دفاتر میں بسااوقات ورکرز کے ساتھ کچھ ناروا سلوک بھی روا رکھے جانے کی شکایات ہوتی ہیں لیکن ایسی حرکت تو شاید ہی کسی باس نے کی ہو جو امریکہ میں اس آدمی نے اپنے ملازم کے ساتھ کر ڈالی۔

 دی سن کے مطابق یہ ملازم اپنے باس کی طرف سے لاگو کی گئی ایک انتہائی عجیب اور سفاکانہ پابندی کی وجہ سے نوکری چھوڑنے پر مجبو رہو گیا۔اس کے باس نے پابندی یہ عائد کی تھی کہ وہ اس کا فون پہلی ہی ’بیل‘ پر اٹھائے گا ورنہ اسے سزا دی جائے گی۔ اس پابندی کے بعد جب بھی باس کا فون آتا، ورکر پر لازم تھا کہ وہ پہلی گھنٹی پر ہی فون اٹھائے، ورنہ اس کا باس اسے اپنا وقت ضائع کرنے کو موردالزام ٹھہرا دیتا اور پابندی کی خلاف ورزی پر اسے سزا کا سامنا ہوتا تھا۔

 ویب سائٹ Redditپر اس شخص نے بتایا ہے کہ میرا باس پہلے بھی میرے ساتھ کافی ناروا سلوک کرتا تھا لیکن اس کی اس پابندی کو میں چند ہفتے ہی برداشت کر سکا اور نوکری چھوڑنے پر مجبور ہو گیا۔اس پوسٹ پر کمنٹس میں لوگ اس باس کو کڑی تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ ایک شخص نے لکھا ہے کہ ”اگر میں آپ کی جگہ ہوتا تو پہلی بیل پر اس کا فون اٹھا کر کہتا کہ ’اچھا آپ ہیں‘ اور پھر اسے ہولڈ پر رکھ کر اپنے کام میں مصروف ہو جاتا۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس



Leave a Reply

%d bloggers like this: